ATBAF ABRAK

( افتاب اکبر )

Uski her bat man laita hon

urdu poetry love-Uski her bat man laita hon

ہاں بھی اب ہے، نہیں، نہیں بھی نہیں
میں نہیں ہوں کہیں، کہیں بھی نہیں

حال احوال اب خدا جانے
میں تو اس جسم کا مکیں بھی نہیں

آسمانوں کا ذکر کیا کیجے
میرے پیروں تلے زمیں بھی نہیں

سرد مہری کی آخری حد ہے
اب تو کہتا کوئی، نہیں بھی نہیں

اس کی ہر بات مان لیتا ہوں
جسکی باتوں کا اب یقیں بھی نہیں

گلے، شکوے، شکایتیں ، رنجش
وہ محبت تو اب کہیں بھی نہیں

جان دی جائے جس کی خاطر اب
زندگی اس قدر حسیں بھی نہیں

سن رہا ہوں تری مگر ابرک
تیری ہر بات دل نشیں بھی نہیں

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اتباف ابرک