ATBAF ABRAK

( افتاب اکبر )

Mosmi shey nahin muhabbat

urdu poetry love-Mosmi shey nahin muhabbat

ایسی ہمت نہ اب عطا کیجے
جو کہے، جائیے خطا کیجے

گر نباہیں گے تو ، ملا کیجے
راہ ورنہ یہیں جدا کیجے

اس کو منزل نہیں کہا کرتے
روز جس کو بدل لیا کیجے

موسمی شے نہیں محبت یہ
کیجئے گر تو پھر سدا کیجے

بے وفا لاکھ ہو زمانہ اب
آپ کا کام ہے وفا کیجے

سر پٹختا ہے لفظ لفظ مرا
اب نہ سمجھے کوئی تو کیا کیجے

اک تو دل میں انہیں جگہ دیجے
پھر کرایہ بھی خود ادا کیجے

لوگ کرتے ہیں دل لگی ابرک
آپ یونہی نہ مر مٹا کیجے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اتباف ابرک