ATBAF ABRAK

( افتاب اکبر )

kitna mushkal mnana hai us ko

kitna mushkal mnana hai us ko-urdu ghazals sms

زندگی میں ذرا مزا ناں تھا
جب ترا حادثہ ہوا ناں تھا

تو نے دیکھا ہے مجھ کو بکھرے ہوئے
میں تصادم زدہ سدا ناں تھا

میں ہوں وہ موڑ جو کہ رستوں سے
روز ہو کر جدا ، جدا ناں تھا

دل انہی محفلوں میں لگتا ہے
جہاں اب کوئی آشنا ناں تھا

کتنا مشکل منانا ہے اس کو
آپ سے شخص جو خفا ناں تھا

اس کے حق میں بس ایک نکتہ ہے
بے وفا ہے وہ ، بے وفا ناں تھا

ٹوٹ کر ہی ، ہر ایک بت جانا
ایک بندہ تھا وہ خدا ناں تھا

برا حالات نے بنا ڈالا
کوئی پیدا ہوا برا ناں تھا

اپنی باتوں میں آ گیا تھا میں
ورنہ کیا تجھ کو جانتا ناں تھا

دنیا ساری تری ہی تھی ابرک
جب تلک وہ ترا ہوا ناں تھا

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اتباف ابرک