ATBAF ABRAK

( افتاب اکبر )

ab Kesi ko nahi talab meri

hindi urdu poets by atbaf abrak

اک مسلسل عذاب ہے یارو
یعنی دل کامیاب ہے یارو

اب کسی کو نہیں طلب میری
ہر طرف سے جواب ہے یارو

اک غلط سانس کی بھی گنجائش
یہاں کب دستیاب ہے یارو

زندگی بیچ ایک صحرا کے
کسی پیاسے کا خواب ہے یارو

پاس آ کر بدل ہی جاتا ہے
آدمی بھی سراب ہے یارو

ہم محبت سمجھ کے کرتے رہے
اور محبت عتاب ہے یارو

خواب دیکھا ہے آج اس نے مرا
آج دیکھا یہ خواب ہے یارو

وہ کہ پرواہ بھی نہ کرتا ہے
اپنا خانہ خراب ہے یارو

دل کا اندھا ہوں اور اندھے کو
دیا بھی آفتاب ہے یارو

وہ نہیں ہے تو فکر ہے کس کو
اور کیا دستیاب ہے یارو

خود کو کھنگالتا ہے جب ابرک
وہ ہی وہ، بے حساب ہے یارو

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اتباف ابرک