ATBAF ABRAK

( افتاب اکبر )

Ic zameen tuk ko mai qabool nahi

Ic zameen tuk ko mai qabool nahi- best urdu poetry

آئینے میں نہ جسم و جاں دیکھوں
جب میں دیکھوں وہاں دھواں دیکھوں

اپنے اندر ہی جب نہیں ملتا
پھر بھلا کیا یہاں وہاں دیکھوں

سارے موسم ہیں بد گماں اتنے
ہوں بہاریں تو میں خزاں دیکھوں

داستاں ہو گئی ہے بادِ صبا
ہر طرف صرف آندھیاں دیکھوں

بس یہی آس ہے جئے جاتی 
وقت کو پھر سے مہرباں دیکھوں

اک عجب کشمکش ہے زیست مری
جان دیکھوں یا جانِ جاں دیکھوں

ہے تجسس کہ اس گلی میں اب 
کون جاتا ہے رائیگاں دیکھوں

نا خداؤں کو یہ شکایت ہے
ان کے ہوتے میں بادباں دیکھوں

اس زمیں تک کو میں قبول نہیں
اور میں ہوں کہ آسماں دیکھوں

جانے سب گھر کہاں گئے ابرک
جس کو دیکھوں میں لا مکاں دیکھوں

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اتباف ابرک